محبت ہوجاتی ہے

Print Friendly, PDF & Email

شاعر:یا سر رفیق


محبت ڈھونڈتی نہیں ہوجاتی ہے
محبت پوچھتی نہیں ہوجاتی ہے
محبت نہ سوال ہے نہ جواب ہے ہوجاتی ہے
محبت ادب آداب ہے ہوجاتی ہے
ارے تم بھی کرو میں بھی کروں ہوجاتی ہے
مجھے بھی محبت تمھیں بھی محبت ہوجاتی ہے
محبت دھو کہ نہیں تما شہ نہیں ہوجاتی ہے
یہ دل میں روح میں اُترکر ہوجاتی ہے
سُن یاسر ہے نامِِ محبت پاکیزہ جسے چاہے ہوجاتی ہے
مطلبی فریبی کو چھوڑ کر ہر اک سے ہوجاتی ہے
محبت ہوجاتی ہے، محبت ہوجاتی ہے

Short URL: http://tinyurl.com/zwvjuyx
QR Code:


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *