٭ منشاء فریدی ٭

ایس ایچ او تھانہ چوٹی زیریں، اشرف قریشی سے ایک ملاقات۔۔۔۔ انٹر ویو :منشاء فریدی

میری رائے :۔ امن کسی بھی خطے کے لیے ایک لازمی امر ہے۔جس کے بل بوتے پر معا شرہ ترقی کے مدارج طے کرتا ہے۔مگر ہمارے ہاں ان جزئیات کو سختی سے رد کر دیا جاتا ہے۔کہ سماج کی ترقی

مقدمہ نمبر 214/14اور حافظ کمال انور کو ناکردہ گناہی کی سزا۔۔۔۔ تحریر: منشاء فریدی

Mansha Fareedi

ستم درستم ہیں کہ جو ہم سہتے چلے آرہے ہیں ۔ ہمارا تن بدن ہے جو مسلسل برداشت کئے جا رہا ہے۔ مجال ہے کہ کسی کے آگے فریادی ہوئے ہوں یا آہ و فغاں کی ہو ۔۔۔ ہر حال

وسیب زادوں کا تحفظ ہماری ذمہ داری۔۔۔۔ تحریر : منشاء فریدی ، ڈیرہ غازی خان

Mansha Fareedi

یہ تلخ حقیقت ہے کہ یہاں سچ اور سچی بات کو بغاوت اور ہر جھوٹ کو قانون پسندی کا نام دیا جاتا ہے ۔۔۔۔ صادق و امین مصلوب ٹھہرتے ہیں ۔ اس عمل میں تاخیر قطعاً نہیں کی جاتی ہے

فرما نبردار گدھے؛ عوام ۔۔۔۔تحریر :منشاء فریدی

Mansha Fareedi

سماج کی سوچ پر چلوں کہ سماج کیلئے کوئی مثبت فکر عام کرنے کا مشن جاری رکھوں جس پر کہ معاشرہ اپنی سمت کا تعین کر سکے ۔۔۔؟ لیکن یہ تو وہی کام ہے جو برسوں سے جاری ہے ۔۔۔

سچ مثبت سمت کی طرف سفرکررہاہے۔۔۔۔ تحریر: منشاء فریدی

Mansha Fareedi

مثبت سمت کا تعین اور مقاصد کی تکمیل کس قدر مشکل کام ہے ۔ہزار ہا رکاوٹیں پیش آتی ہیں کسی منزل کے حصول کی کوشش میں ۔۔(یعنی ) منزل کو پانے کی کوششیں بھی ایک طرح سے دشواریوں کے زمرے