شب قدر کی فضیلت۔۔۔۔ تحریر: میاں نصیراحمد

Mian Naseer Ahmad
Print Friendly, PDF & Email

رمضان کا مہینہ خیر وبرکت والا مہینہ ہے ہر مسلمان چاہتا ہے کہ صوم وصلوۃاور تراویح کی پابندی کرے تاکہ وہ دوگنا ثواب اس مبارک مہینے میں حاصل کر سکے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس نے رمضان کا روزہ ایمان اور تزکیہ نفس کی نیت سیرکھا تو اس کے گذشتہ تمام گناہ معاف ہوجائیں گے۔اور جو لیلہ القدر کو ایمان اور تزکیہ نفس کی نیت سے قیام کرتا ہے اس کے بھی گذشتہ تمام گناہ معاف ہوجاتے ہیں گویا جن گناہوں کا ہمیں علم بھی نہیں ہے اللہ تعالی انھیں اپنی رحمت سے مٹا دیتے ہیں بشرطیکہ ہم آئندہ گناہوں سے بچنے کا عزم کریں اور اپنے سابقہ گناہوں پر شرمندہ ہوں اوراس عظیم الشان رات کی عظمت و فضیلت کا ذکر کرتے ہوئے حضرت انس بن مالک بیان کرتے ہیں کہ حضور نبی اکرم نے ارشاد فرمایاجب شب قدر آتی ہے تو حضرت جبرائیل امین علیہ السلام فرشوں کی جماعت کے ساتھ زمین پر آتے ہیں اور ملائکہ کا یہ گروہ ہر اس بندے کے لیے دعائے مغفرت اور التجائے رحمت کرتا ہے جو کھڑے یا بیٹھے ہوئے اللہ تعالیٰ کے ذکر اور عبادت میں مشغول رہتا ہے۔جب کہ ایک روایت میں یہ بھی ہے کہ فرشتے ان بندں سے مصافحہ بھی کرتے ہیں کتنا خوش نصیب اور بلند اقبال ہے وہ بندہ! جو اس رات کو اپنے پروردگار کی یاد میں بسر کرتا ہے۔ جبرائیل امین اور فرشتے اس کے ساتھ مصافحہ کرنے کا شرف حاصل کرنے کے لیے آسمان سے اْتر کر اس کے پاس آتے ہیں او ر اس کی مغفرت و بخشش کے لیے دعائیں مانگتے ہیں ام المومنین حضرت عائشہ صدیقہ فرماتی ہیں کہ میں نے عرض کیایا رسول اللہ مجھے بتائیں کہ میں لیلتہ القدر کو کیا دْعا مانگوں آپ نے ارشاد فرمایا، یہ دْعا پڑھا کرو ترجمہ اے اللہ تو معاف کر دینے والا اور معافی کو پسند کرنے والا ہے پس مجھے بھی معاف کر دے ۔
لیلتہ القدر وہ رات ہے جو صاحبان ایمان کے لیے مغفرت و رحمت اور بخشش کا پیغام لے کر آتی ہے۔ وہ رات جو رزق مانگنے والوں کو رزق، عافیت چاہنے والوں کو عافیت، صحت کی تمنا کرنے والوں کو تندرستی، خیر و بھلائی کے طلب گاروں کو خیر و بھلائی، اولاد کے خواہش مندوں کو اولاد کی نعمت، مغفرت کے متلاشیوں کو بخشش عطا کر جاتی ہے۔ اس عظیم الشان رات کی عبادت اور اجر و ثواب کے حوالے سے حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہا بیان کرتے ہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد گرامی ہے جو شخص لیلتہ القدر میں ایمان کے ساتھ اور اجر و ثواب کی نیت سے (نماز میں) قیام کرتا ہے، تو اس کے پچھلے سارے گناہ معاف کر دیئے جاتے ہیں اس رات کے بابرکت ہونے کے لیے یہی دو باتیں کافی ہیں کہ قرآن مجید کا نزول اسی رات ہوا اور نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت کا فیصلہ بھی اسی رات کیا گیا۔ اس مناسبت سے اللہ تعالی سے دنیا و آخرت میں برکت کی دعا کیجئے ۔عائشہ رضی اللہ عنہا سے مروی ہے فرماتی ہیں کہ اے اللہ کے رسول! اگر میں لیلہ القدر کو پالوں تو رب تعالی سے کیا مانگوں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ یہ مانگیے کہ اے اللہ آپ خوب درگزر کرنے والے ہیں، آپس میں درگزر کو پسند فرماتے ہیں سو مجھے بھی معاف کردیجئے۔حضرت نعمان (رض) سے روایت ہے کہ بنی کریم ﷺنے ارشاد فرمایا ہے کہ میری اْمت کی سب سے بڑی عبادت قرآن کریم کی تلاوت ہے اور نبی کریم ﷺ کا ارشاد ہے کہ یہ مقدس رات اللہ تعالی نے فقط میری اْمت کو عطافرمائی ہے سابقہ اْمتوں میں سے یہ شرف کسی کو نہیں ملایہ خوش نصیبی صرف امت محمدی کو ہی حاصل ہے اس شب ، شب قدر کی عبادت میں کھڑے انسان پر رب ذوالجلال کی خاص عنایتوں کا نزول ہورہاہوتاہے اور وہ ان ہی رحمتوں ، برکتوں اور عنایتوں کواپنے دامن میں سمیٹنے کے لئے اس شب کا پورے سال بھربڑی بے چینی اور بیتابی سے انتظار کررہاہوتاہے تاکہ اپنے رب ذوالجلال کی اس شب، شب قدر کی بابرکت ساعتوں سے فیضاب ہوسکے دلوں کو اطمینان اللہ کے ذکر سے ہی ہوتاہے شب قدر کی ایک بڑی فضیلت یہ ہے کہ اس کے متعلق قرآن کریم میں پوری سو ر ہ نازل ہوئی ہے سور قدر میں ارشاد باری تعالیٰ ہے بے شک ہم نے اس قرآن کو (لوح محفوظ سے آسمان دنیا کی طرف)شب قدر میں اتارا اور آپ کو کچھ معلوم ہے کہ شب قدر کیا ہے شب قدر ہزار مہینوں سے بہترہے) اس میں فرستے اور جبرئیل اترتے ہیں اپنے رب کے حکم سے ہر کام کے لیے وہ سلامتی ہے صبح چمکنے تک اس سورہ سے معلوم ہوا کہ شب قدر ایسی بابرکت اور عظمت وبزرگی والی رات ہے جو ہزار مہینوں سے بہتر ہے اسی رات میں قرآن حکیم لوح محفوظ سے آسمان دنیا پر نازل ہو اسی رات میں فرشے اور جبرئیل علیہ السلام زمین پر اترتے ہیں اسی رات میں صبح طلوع ہونے تک خیروبرکت نازل ہوتی ہے اور یہ رات سلامتی ہی سلامتی ہے لیلتہ القدر یہ سلامتی اور امن کی رات ہے اور یہ کیفیت امن و خیر صبح کے نکلنے تک رہتی ہے اللہ تعالی ہم سب کوماہ رمضان کے روزے رکھنے اور عبادت کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔

Short URL: http://tinyurl.com/hlvavg5
QR Code:


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *