رمضان اسپیشل پیکج

Print Friendly, PDF & Email

تحریر: نبیلہ خان

 ٹماٹر اے، پیازے کھیرے اے سبزی والا اپنا راگ الاپتے ہوئے  گلی سے نکلنے والا ہی تھا کہ منصور نے آواز دے کے  روک دیا بھائی  ذرا رکنا،،،، یہ پیاز کتنے روپے کلو لگائے  ہوئے ہیں؟ منصور نے عاجزانہ  انداز میں پوچھا جیسے اس کے اس غریبانہ انداز پہ سبزی والے کو ترس ہی آجانا ۔۔۔۔بھایا منڈی کا ریٹ 60 روپے چل رہا  مگر میں  70 دے  رہا  ،اس گرمی میں  کھجل خوار ہونے کے بعد اتنا تو میرا بھی حق بنتا،،، سبزی والے نے   سچ کا بول بالا کرتے ہوئے  منصور پہ احسان عظیم  جتانا ضروری  سمجھا  ،،،یہ توبہت مہنگے داموں فروخت کر رہے تم؟  رمضان کا ہی کچھ خیال کر لو  ہم غریب لوگ  کیا کھائیں پیئں گے؟  یہ تو حکمرانوں کو سوچنا چاہئے  بھایا ہم بھی تو آپ جیسے ہی مزدور لوگ ہی ہیں سبزی والے نے اپنے تئیں عقلمندی کی بات  کی ،،،اچھا  ادھا کلو پیاز  اور  چٹنی کا سامان دے دو  باقی اللہ مالک ہے  منصور نے جیب سے اکلوتا “سو” کا نوٹ نکالتے ہوئے  دل ہی دل میں  حساب لگاتے ہوئے  شام کی افطار کے  بارے میں  سوچا  ،جہاں  اس کا ادھے درجن پر مشتمل  خاندان افطاری  میں  پیٹ بھر کھانے کی امید لگائے  اسکا انتظار  کر رہے تھے….

324 total views, 3 views today

Short URL: //tinyurl.com/yxvmbaxv
QR Code:
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *