میرا زندہ اب بھی ضمیر ہے

Print Friendly, PDF & Email

Ahmed Nisar


تیری زلف کا جو اسیر ہے
وہ زمانے بھر کا امیر ہے

جو زمانے بھر کا امیر ہے
تیرے در کا ادنیٰ فقیر ہے

تیرا شکریہ میرے اے خدا
میرا زندہ اب بھی ضمیر ہے

تو خوشی سے مجھ کو نواز دے
بڑی اُلجھنوں میں حقیر ہے

اسے کیا زمانہ ڈرائے گا
تیرے عشق کا جو اسیر ہے

میرے حق میں کوئی بھی شئے نہیں
یہ سوالِ قلبِ فقیر ہے

دلِ زار پر جو ہنسا کرے
یہ زمانہ کتنا شریر ہے

تو نثارؔ حق پہ نثارہو
تیرا دل اماں کا سفیر ہے
****

(شاعر : احمد نثارؔ ، مہاراشٹر، انڈیا)

1,114 total views, 2 views today

Short URL: http://tinyurl.com/gqd945a
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...