٭ شاہد شکیل ٭

تھیلیسیمیا۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

یہ بیماری ،خون کی کمی ،جسم میں پروٹین کی خرابی اور آکسیجن کی نقل و حمل میں مداخلت کے باعث پیدا ہوتی ہے،ماضی میں تھیلیسیمیا ہلکے فارم اور صحت کی بقاء کیلئے خون میں پیتھو جینز کی رفتار سست ہونے

لاپرواہی۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

کئی والدین سے دنیا کے جھمیلوں اور اپنی انا کے خول میں جکڑا ہونے کے سبب اپنی اولاد سے جان بوجھ کر یا ناتجربہ کار ہونے اور انجانے میں ناقابل تلافی غلطیاں سر زد ہوتی ہیں جس کا خمیازہ ان

پابندی۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

حالیہ رپورٹ کے مطابق دنیا کے کئی ممالک اس بات پر متفق ہو گئے ہیں کہ دوہزار چالیس تک دنیا بھر میں تمباکو نوشی پر مکمل پابندی عائد کر دی جائے ۔لاس اینجلس ہو ، پیرس یا سڈنی دنیا بھر

خوف۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

خوف ہر ذ ی روح میں پایا جاتا ہے انسان کبھی کبھی انجانی اور ان دیکھی چیز کے بارے میں سن کر بھی خوفزدہ ہو جاتا ہے، مثلاً اگر کسی نے کبھی ہوائی سفر نہیں کیالیکن خوف ہوتا ہے کہ

انرجی پاور پلانٹس۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

بجلی کی مزید پیداوار کے لئے مستقبل میں ہوائی ٹربائین پرواز کریں گے کیونکہ موجودہ دور میں ہوا اور پانی سے بجلی کی پیداوار ناکافی ہے نئی ٹیکنالوجی کے تحت ہوائی ٹربائین کی دوسری جنریشن مستقبل میں پرواز کرکے بجلی

کیوں؟۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

وقت صدا ایک سا نہیں رہتا انسان کی زندگی طویل بھی ہے اور بہت مختصر بھی ،انسان کی زندگی میں کئی بار ایسے واقعات بھی پیش آتے ہیں جہاں وہ ہمت ،حوصلے، تحمل مزاجی اور خود اعتمادی سے کام لینے

پیشہ یا مجبوری۔۔۔۔ تحریر :شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

دنیا کے کسی بھی ملک میں گدا گری پر پابندی نہیں ہے بشرطیکہ اسے پیشہ نہ بنا یا جائے اور پابندی نہ ہونے کے سبب ہی آج دنیا بھر میں بھیک مانگنے کو پیشہ بنا لیا گیا ہے خوشی سے

جرمنی میں اسلام(حصہ دوم)۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

حلال و حرام۔اسلام میں واضح طور حلال وحرام کے بارے میں آگاہ کر دیا گیا ہے اور مذہبی امور کے نمائندوں نے ان تمام جانوروں کے استعمال کو ممنوع قرار دیا جنہیں اسلامی قوانین کے مطابق ذبح نہیں کیا جاتا،لیکن

جرمنی میں اسلام۔(حصہ اوّل)۔۔۔۔ تحریر:شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

جرمنی میں اسلامی زندگی کا آغاز دو سو ساٹھ سال قبل ہوا ، ہزاروں مسلمان جنگوں میں شریک ہوئے لیکن ان کی پہچان اور شناخت ایک جنگجو یا فوجی تک ہی محدود رہی،فریڈرک ویلہلم کے دور میں بیس مسلمانوں کو

سزائے موت۔۔۔۔ تحریر: شاہد شکیل، جرمنی

Shahid Shakil

ایمنیسٹی انٹرنیشنل کی حالیہ رپورٹ کے مطابق دنیا میں سب سے زیادہ چین میں سزائے موت دی جاتی ہے،رپورٹ کے مطابق دو ہزار چودہ میں دو ہزار چار سو چھیاسٹھ افراد کو سزائے موت دی گئی اور دنیا بھر میں