٭ ملک شفقت اللہ ٭

بے ہودہ سودی نظام۔۔۔۔تحریر:شفقت اللہ

Shafqat Ullah

ہٹلر نے اعلان کیا تھا کہ ایک بھی یہودی نہیں چھوڑوں گا اور اس نے بات پوری کی ۔جہاں کوئی یہودی ملتا اسے ختم کر دیتا لیکن اسکے بعد چند یہودیوں کو زندہ چھوڑ دیا اس لئے کہ اگر کوئی

مغل اعظم کے دربار میں شنوائی؟۔۔۔۔تحریر: شفقت اللہ

Shafqat Ullah

پرانے وقتوں کی بات ہے کہ ایک مسافر کاسفر کے دوران ایک گاؤں سے گزرہوا جو ٹھگوں کے گاؤں کے نام سے مشہور تھا وہاں اسے شام ڈھل گئی تو اسنے رات گزارنے کیلئے ایک شخص سے رہائش کا مطالبہ

یہ تعلیمی نظام !مستقبل کی ضمانت ؟۔۔۔۔ تحریر: شفقت اللہ

Shafqat Ullah

اسلامی جمہوریہ پاکستان جب معرض وجود میں آ گیا تواگرچے اس وقت ہمارے پاس اسلامی قانون کا کوئی زائچہ موجود نہ تھا لیکن قرآن اور احادیث کی صورت میں زاویہ تو موجود تھا کہ ان کی رو شنی میں اسلامی

پاکستان اور دوست ممالک۔۔۔۔ تحریر:شفقت اللہ

Shafqat Ullah

برطانیہ کی آزادی پوری دنیا میں کسی عجوبے سے کم نہیں کہ نہ تلوار چلی اور نہ گولی نہ ہی کوئی نعش گری بس ایک الگ ریاست قائم ہو گئی کیونکہ وہ بھی ایک عیسائی ملک تھا اور اس کے

مزدوروں کا شکاگو سے اب تک کا سفر۔۔۔۔ تحریر:شفقت اللہ

Shafqat Ullah

چین اس وقت دنیا میں سب سے زیادہ آبادی والا ملک ہے لیکن پھر بھی کئی ممالک سے ہر دوڑ میں آگے ہے اور یوں نظر آتا ہے کہ آنے والے وقت کی سپر پاور بھی چین ہی ہوگا ۔اس

علامہ محمد اقبال کا نظریہ خودی۔۔۔۔ تحریر:شفقت اللہ

Shafqat Ullah

اگر سوال یہ ہو کہ علامہ محمد اقبال رحمہ اللہ علیہ کی نظر میں فلسفہ حیات کیا ہے تو اسکا جواب صرف ایک لفظ میں دیا جا سکتا ہے اور وہ ہے ،،خودی،،۔اقبال نے اپنی فکرو نظر سے اس لفظ

پاکستان بمقابلہ بھارت۔۔۔۔تحریر: شفقت اللہ

Shafqat Ullah

ارسطو نے کہا تھا کہ قانون ایک مکڑی کا بنایا وہ جالا ہے کہ جس میں چھوٹے جاندار یعنی حشرات تو پھنس سکتے ہیں لیکن بڑے جانور آسانی اس جالے کو سے پھاڑ کر نکل جاتے ہیں ۔پاکستان بنانے کا