٭ مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی ٭

تحفظ ماحولیات میں اسلام کا کردارورہنمائی

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانامحمدطارق نعمان گڑنگی خالقِ کائنات نے تخلیقِ کائنات کے ساتھ ہی ایک مضبوط نظام عطا فرما کر پوری کائنات کو محفوظ و مامون بنا دیا جس پر قرآن مجید کی کئی آیات ِ مبارکہ شاہد ہیں چنانچہ ارشاد باری

جہیز اور ہمارا معاشرہ

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی آہ!حسن ڈھل گیاجوانی گزر گئی بیٹی غریب باپ کی بے موت مرگئی مذہب اسلام ایک آفاقی دین ہے جس نے رہتی دنیا تک کہ ہر شخص کے لیے زندگی کاایک مکمل لائحہ عمل دیا

صبروتحمل؛ ایک اعلیٰ انسانی قدر

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی مصائب و آلام، مصیبتوں اور پریشانیوں پر شکوہ کو ترک کر دینا صبر ہے۔ مگر حقیقت یہ ہے کہ صبر کرنا مشکل کام ہے کیونکہ اس میں مشقت اور کڑواہٹ پائی جاتی ہے ۔

قطب الاقطاب، سلطان العارفین، قدوۃ السالکین خواجہ فرید الدین گنج شکر رحمۃ اللہ علیہ

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی اللہ والے وہ ہوتے ہیں جنہیں دیکھ کہ اللہ یاد آجاتاہے ان کے کام اورمقام کواللہ پاک بلند کردیتاہے وہ دنیامیں ہوتے ہیں توان کے چاہنے والے انہیں بلندیوں میں دیکھتے ہیں اورجب دنیاسے

عقیقہ۔۔۔! اولاد سے تکلیفیں دور کرنے کا نبویؐ طریقہ

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی اللہ تعالیٰ نے اپنے بندوں کو لاتعداد نعمتیں عطا کی ہیں اور ان نعمتوں پر انہیں اظہار تشکر کا حکم دیا ہے اگر نعمت مل جانے کے بعد بندہ باری تعالیٰ کا شکر ادا

مرنے سے پہلے قرض کی ادائیگی کردی جائے

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اکرم ﷺ نے بنی اسرائیل کے ایک شخص کا تذکرہ فرمایا جس نے بنی اسرائیل کے ایک دوسرے شخص سے ایک ہزار دینار قرض

گالی! ایک سنگین جرم اور خطرنا ک گناہ

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی دینِ اسلام نے گالی کو سنگین جرم اورگناہ کبیرہ قرار دیا ہے مگر افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ہمارے معاشرے میں گالم گلوچ کو بطور ہتھیاراور آخری حربہ استعمال کیا جاتا ہے جو

حق گوئی، اسلامی معاشرے کا بنیادی وصف

M. Tariq Nouman Garrangi

تحریر: مولانا محمد طارق نعمان گڑنگی انسانی زندگی میں حق گوئی کی صفت اپنا ایک خاص مقام رکھتی ہے۔ معاشرہ کے لوگ حق گوئی جیسی عظیم صفت کے حامل انسان پرعزت و تکریم کی نگاہ ڈالتے ہیں اور اس کی