کوکا کولا۔۔۔۔ شاہد شکیل

Shahid Shakil
Print Friendly, PDF & Email

حالیہ ٹیسٹ رپورٹ کے مطابق سافٹ ڈرنکس میں جراثیم پائے جانے کا انکشاف ہوا ہے ، سافٹ ڈرنک میٹھا ہے اور اس لئے صحت کے لئے مضر ہے ۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ لاتعداد ڈرنکس میں خطرناک رنگوں کی آمیزش ہے ، یہ کوئی راز کی بات نہیں کہ سافٹ ڈرنکس صحت کے لئے مضر ہیں ۔
سافٹ ڈرنکس میں چینی کی زیادہ مقدار ہے ، حالیہ تحقیق کی روشنی میں چینی اور مختلف رنگوں کی بھاری کھپت نے کوکا کولا اور پیپسی کولا کو انسانی صحت کے لئے انتہائی خطرناک بتایا گیا ہے ، ماہرین کا کہنا ہے کہ کوکا کولا اور پیپسی کولا میں جو کیمیکل استعمال کیا گیا ہے مقدار کے تناسب سے بہت زیادہ ہے ۔
۔4-Methylimidazole: 4-MEI
یہ رنگ بہت سے سافٹ ڈرنکس میں موجود ہے ۔ امریکا میں ہر وہ ڈرنک جو 29 مائکرو گرام یا 4 ایم ای آئی پر مشتمل ہے صحت کے لئے مضر ہے اور اس پر نشان لگا
دیا گیا ہے ۔

’’ چوہے کینسر میں مبتلا ‘‘ دوہزار سات میں چوہوں پر تجربہ کیا گیا تھا اور وہ کینسر میں مبتلا ہو گئے ، براہ راست یہ کیمیکل انسان کے لئے خطرہ ہے لیکن سائنسی طور پر ثابت نہیں ہو سکا ۔ امریکی ماہرین نے گزشتہ سال اپریل سے ستمبر تک اکیاسی مختلف سافٹ ڈرنکس کا تجزیہ کیا سپرائٹ کے علاوہ سب کا نتیجہ سنگین تھا ہر ڈرنک میں 4 ایم ای آئی شامل تھا ۔
’’ پیپسی کولا کے تباہ کن نتائج ‘‘ کوکا کولا کی نسبت پیپسی میں ایک سو پچھتر مائکرو گرام کیمیکل پائے گئے جو کہ خطر ناک حد تک صحت کے لئے مضر ہے اسی وجہ سے پیپسی کولا کو امریکا کی مارکیٹ سے ہٹا دیا گیا ، گزشتہ دنوں جرمنی کے تمام سٹورز سے بھی پیپسی کولا کو ہٹایا گیا ہے ۔
رنگین شربت پینے کی بجائے سادہ پانی کا استعمال صحت کے لئے مفید ہے ، پاکستان بھر میں مختلف ڈرنکس کمپنیز رنگوں کی آمیزش کو مکس کر کے جو شربت یا رنگ برنگے ڈرنکس عوام کو پیش کرتے ہیں وہ سب جان لیوا ہیں ۔ کمپنیز کو اس سے کوئی سروکار نہیں کہ کوئی جئے یا مرے بس ہمارا مال بکنا چاہئے ۔
حکومت اور خاص طور پر وزارتِ صحت اگر کوئی ہے تو ایسے لوگوں کے خلاف کارروائی کرے اور ان تمام مشروبات پر پابندی عائد کرے جو صحت کے لئے مضر ہیں ۔
گرمی تو اپنی آب و تاب دکھا رہی ہے عنقریب رمضان شریف کی آمد اور ہر ذی روح کو قدم قدم پر پانی کی طلب ہے ، غریب عوام پررحم کیا جائے اور صاف پانی ہی مہیا کی جا سکے تو حکومت کا عوام پر بہت بڑا احسان ہو گا ۔ کم سے کم رمضان شریف کے مبارک مہینے میں حکومت کو چاہئے کہ بجلی کے جعلی بحران کی ڈرامہ بازی کو بند کرے اور یزید کے نقشِ قدم پر چلنے کی بجائے عوام کو اس با برکت ماہ میں بجلی مہیا کرے تاکہ وہ ٹھنڈے پانی سے روزہ ہی افطار کر سکیں ۔۔۔
یاد رکھیں روزہ دار اور ماں کی آہ کو فرش سے عرش تک جاتے دیر نہیں لگتی ۔

Short URL: http://tinyurl.com/hnvcnbx
QR Code:


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *