ضلع میانوالی میں سیکورٹی کمپنیوں کی لوٹ مار۔۔۔۔ از: ذوالفقار، داؤد خیل

Print Friendly, PDF & Email

ضلع میانوالی میں پرائیویٹ سیکورٹی کمپنیز نے ظلم کے اگلے پچھلے ریکارڈ توڑ دیئے ہیں۔ سیل فون کمپنیز نے ہر گاؤں اور قصبے میں ٹاورز نصب کررکھے ہیں۔ جن کی سیکورٹی پرائیویٹ کمپنیز کو ٹھیکے پر دی گئی ہے۔ہر ٹاور پر دو سیکورٹی گارڈز بارہ بارہ گھنٹے ڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں۔ بارہ گھنٹوں کی تنخواہ صرف چار ہزار۔پی ٹی سی ایل جیسی مالامال کمپنیز کی ایکسچیجز پہ تعینات سیکورٹی گارڈز کے ساتھ تو اور بھی زیادہ ظلم ہوتاہے کہ رات کو سیکورٹی گارڈ کی ڈیوٹی اور دن کو لائن مین کی ڈیوٹی بھی کئی ایکسچیجز پر لی جارہی ہے۔ دو دو ڈیوٹیز کی تنخواہ صرف پانچ سے چھ ہزار۔ کئی سیکورٹی گارڈز جو پچھلے دس دس سال تین چار سے چھ ہزار روپے ماہاناتنخواہ پر ڈیوٹی سرانجام دے رہے تھے ، اُن کوفارغ کردیاگیاہے۔ ان بے چاروں کو تعیناتی کے لیٹر تک نہیں دیئے گئے تھے۔اسی طرح ضلع میانوالی کے مختلف بینکز پر تعینات سیکورٹی کمپنیز کے گارڈز سے بھی بارہ بارہ گھنٹے ڈیوٹی لی جارہی ہے اور تنخواہ آٹھ سے دس ہزار روپے تک دی جارہی ہے۔داؤدخیل کی مقامی سیمنٹ فیکٹری میں کام کرنے والی سیکورٹی کمپنی بھی اپنے گارڈز سے بارہ بارہ گھنٹے ڈیوٹی کے دس سے بارہ ہزار روپے دے رہی ہے۔ حالانکہ گورنمنٹ نے آٹھ گھنٹے ڈیوٹی کی کم سے کم تنخواہ بارہ ہزار ماہانا مقرر کررکھی ہے۔سیکورٹی کمپنیز نے اپنے آفسز سرگودھا اور اسلام آباد بنا رکھے ہیں ۔ عام سیکورٹی اہلکار کی ذمہ داران تک رسائی بھی نہیں ہوتی۔تنخواہ کیش کی صورت میں مقرر کردہ اہلکار لے آتاہے۔ حکومت کو چاہیے کہ فی الفور اس ظلم کا نوٹس لے اور جو ادارے سیکورٹی کمپنیز سے کنٹریکٹ کرتے ہیں وہ بھی سیکورٹی کمپنیز کو اس بات کا پابند کریں کہ وہ اپنے گارڈز کو حکومت کی طرف سے مقرر کردہ اجرت ضرور دیں۔ اور ہر سال تنخواہ میں معقول اضافہ بھی کریں۔ سیکورٹی گارڈز کی زندگی اجیرن ہوکے رہ گئی ہے۔ بارہ بارہ گھنٹے ڈیوٹی ، ہفتہ وار چھٹی سے محرومی نے سیکورٹی گارڈز کو نفسیاتی مریض بنا کے رکھ دیاہے۔ آئے روز چوری اور ڈکیتی کی وارداتوں کا ایک سبب سیکورٹی گارڈز کے ساتھ ہونے والی ناانصافی بھی ہو سکتاہے۔حکومت کو اپنی رٹ غریب مزدوروں کے حقوق کی خاطر ضرور دکھانی چاہیے۔ضلع میں بیٹھے ہوئے لیبر آفیسر کو بھی اس کا نوٹس لینا چاہیے اور حکام بالا کو اس ظالمانہ اقدام سے آگاہ کرنا چاہیے ۔ ذمہ دار کمپنیز کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لانے کی ضرورت ہے۔
ذوالفقارخان۔ پکی شاہمردان (داؤدخیل)تحصیل و ضلع میانوالی

Short URL: http://tinyurl.com/js25wyu
QR Code:


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *