بھارت کی جارحیت

انتہاء پسندبھارت کا اصلی چہرہ

تحریر: رانا اعجاز حسین بھارت نے لائن آف کنٹرول پر بلااشتعال فائرنگ اور گولہ باری کی صورت میں جارحانہ کارروائیوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ گذشتہ دنوں بھی بھارتی فوج نے جنگی جرائم کا ارتکاب کرتے ہوئے ایمبولینس اور

لہو لہو کشمیر

تحریر: اسریٰ خان عصر یہ تو سب جانتے ہیں کے کشمیر اس وقت پاکستان کے لیے اک سلگتا مسلہ ہے۔پر افسوس کے اس مسئلے کے حل کے لئے کوئی خاص کاروائی منظر عام پر نھیں آئی۔ کشمیر کی سرحدیں ایک

دیکھو تم کشمیر کو ظلم کی تصویر کو!۔

تحریر:ڈاکٹر احسان باری بھارتی منافقانہ کردار پوری دنیا پر واضح ہو چکا کہ جو بات کی خدا کی قسم لاجواب کی! خود مقبوضہ کشمیر میں مہینوں سے کر فیو لگا رکھا ہے اور نو جوانوں کا قتل عام جاری و

بھارت کی دھمکیاں اور پاکستان کا جذبہ

تحریر : علی رضا الزام تراشی کی کوئی نہ کوئی حد ہوتی ہے لیکن بھارت تو وہ بھی پار کر گیا ہے۔اڑی میں بھارتی افواج پر ہونے والا حملے کابے بنیاد الزام پاکستان پر لگا دیا گیا ۔نہ اس حملے

پاکستان کے حالات اور ہماری حکمت عملی !۔

تحریر:رقیہ غزل اگر پاکستان کو درپیش خطرات کے تناظر میں بات کی جائے تو پاکستان کو صرف بھارت ہی سے نہیں بلکہ افغانستان اور ایران سے بھی کسی حد تک خطرہ لاحق ہے بھارتی عزائم تو کسی سے بھی چھپے

سندھ طاس معاہدہ اور ہندو بنیے!۔

تحریر: شفقت اللہ پچھلی چار دہائیوں سے اب تک بھارت نہ صرف خطے میں بلکہ پوری دنیا میں ایک دہشتگرد ملک کے طور پر سامنے آرہا ہے اور اسکو اقوام متحدہ کی طرف سے نکیل نہ ڈالے جانے کی وجہ

مودی کا سارک پر وار

تحریر:غلام رضا مودی سرکار کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے علاقائی تعاون خطرے میں پڑچکا ہے ،بھارت کے انکار کے بعد 9اور 10نومبر کو اسلام آبادمیں ہونے والی سارک کانفرنس ملتوی کرنا پڑی کیونکہ کسی بھی ایک ملک کی عدم

نہتّے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کی مذمّت

تحریر: میر افسر امان، کراچی رابطہ فورم انٹرنیشنل کے زیر اہتمام آل پارٹیز کانفرنس۔۔۔ نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کی مذمّت کے لیے زیر صدارت ،نصرت مرزا صاحب مشہور اینکر پرسن، دانشور، کالم نگار ، تجزیہ نگار اور مسلم اتحاد

جو گرجتے ہیں وہ برستے نہیں

تحریر :ڈاکٹر احسان باری انگریز کی تقسیم کہ جو بھارت پر700سال تک مقتدر رہے انھیں جاتے ہوئے پانچواں حصہ پاکستان کی صورت میں دے گئے۔اس طرح 19کروڑ مسلمان انڈیا میں رہ گئے۔پھر را کی سازشوں اور اپنے تنخواہ دار ٹاؤٹ

کشمیرمیں ظلم و ستم کی انتہا

تحریر: نائرہ عثمان غنی مقبوضہ کشمیر تقریبا ایک کروڑ انتالیس لاکھ کی آبادی والا خطہ۔ جہاں صرف مسلمان ہی نہیں بلکہ کم و بیش تمام مذاہب سے تعلق رکھنے والے انسان بستے ہیں۔اس خطے میں ہندو،عیسائی، بدھ مت، اور مسلمان