٭ فتح محمد عرشیؔ ٭

۔100 باراتی،100بکرے۔۔۔۔ انتخاب: فتح محمد عرشیؔ ، پائی خیل

پرانے زمانے کی بات ہے کہ ایک گاؤں والوں نے اپنے قریبی گاؤں میں رشتہ طے کیا۔ بیٹی والوں نے شرط رکھی کہ جب تک باراتی ہماری فرمائش پوری نہیں کریں گے، ہم دلہن کو رخصت نہیں کریں گے۔ لڑکے

جنات کی بارات۔۔۔۔ مصنف: فتح محمد عرشی، پائی خیل

میرا نام شاہنواز خان ہے اور اب میری عمر 70 سال کے لگ بھگ ہے۔ یہ قصہ اس وقت کا ہے، جب میں جوان تھا۔ 8 ایم ایم رائفل ہر وقت کندھے پر ہوتی تھی کیونکہ کچھ لوگ میرے خون کے پیاسے

قبر کا خزانہ۔۔۔۔ مصنف: فتح محمد عرشیؔ ، پائی خیل

رات آدھی کے قریب گزر چکی تھی۔تاریکی ایسی تھی کہ ہاتھ کو ہاتھ سجھائی نہ دیتا تھا۔ہر طرف ہو کا عالم تھا۔ ایسے میں قبرستان میں موجود درخت یوں دکھائی دیتے تھے۔ جیسے بدروحیں رقص کر رہی ہوں۔ایسے میں ایک