پاکستانی ٹیم کی بھارت روانگی تحفظ کی یقین دہانی سے مشروط

Print Friendly, PDF & Email

پاکستان کے وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ دھمکیوں کے سائے میں کرکٹ نہیں ہو سکتی اور اگر بھارتی حکومت کی جانب سے پاکستان کی کرکٹ ٹیم کے تحفظ کی ضمانت نہ دی گئی تو ٹیم کو ورلڈ ٹی 20 مقابلوں کے لیے نہیں بھیجا جائے گا۔ ادھر بھارتی کرکٹ بورڈ کے سیکریٹری انوراگ ٹھاکر نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی ٹیم بھی دیگر ٹیموں جتنی ہی اہم ہے اور کسی ٹیم کو ٹورنامنٹ میں حصہ نہ لینے کے لیے کوئی بھی بہانہ نہیں ڈھونڈنا چاہیے۔ جمعرات کو اسلام آباد میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ دھمکیاں کسی اور ٹیم کے حوالے سے نہیں پاکستان کے حوالے سے دی گئی ہیں لہذا سکیورٹی کی ضمانت بھی خصوصاً پاکستان کے حوالے سے دی جانی چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ ’ہر پاکستانی شہری اور حکومت چاہتی ہے کہ پاکستانی ٹیم بھارت جائے لیکن اگر حکومتی سطح پر ضمانت نہ دی گئی تو پاکستانی ٹیم کو بھارت جانے کی قطعی اجازت نہیں دی جائے گی۔‘ چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ پاکستانی کھلاڑیوں کو برابر کا موقع ملے اور انھیں کسی قسم کے دباؤ کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ ’ کرکٹ دھمکیوں کے سائے میں کیسے ہو سکتی ہے اور ہم صرف ’لیول پلیئنگ فیلڈ‘ مانگ رہے ہیں۔۔۔ایڈن گارڈن میں ایک لاکھ لوگ ہوتے ہیں اور کھلاڑیوں کو دھڑکا لگا ہو کہ کوئی بوتل یا پتھر نہ مارے تو ایسی حالت میں وہ کیسے بہترین کارکردگی دکھا سکتے ہیں۔‘

(بشکریہ: بی بی سی اُردو)

 1,255 total views,  2 views today

Short URL: http://tinyurl.com/jxhpu6c
QR Code:
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *