چین نے عالمی ماحولیاتی معاہدے کی توثیق کر دی

Print Friendly, PDF & Email

چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق ملک کے اعلیٰ ترین قانون ساز ادارے نے پیرس میں ہونے والے عالمی ماحولیاتی معاہدے کی توثیق کر دی ہے۔ چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی شن ہوا نیوز کے مطابق نیشنل پیپلز کانگریس کی قائمہ کمیٹی نے اس معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔ گذشتہ برس دسمبر میں عالمی رہنماؤں نے پیرس میں سنہ 2050 تک دنیا کے درجہ حرارت میں اضافے کو دو ڈگری تک محدود کرنے کا معاہدہ کیا تھا۔ دنیا میں طے پانے والے پہلے جامع ماحولیاتی معاہدے پر اس وقت تک قانونی طور پر عمل درآمد شروع ہو سکتا ہے جب تک عالمی سطح پر 55 فیصد کاربن کے اخراج کے ذمہ داری ممالک اس کی توثیق نہیں کر دیتے۔ اس وقت دنیا میں سب سے زیادہ چین میں عالمی ماحولیاتی تبدیلیوں کا سبب بننے والی
CO2
گیس یا کاربن کا اخراج ہوتا ہے۔ اگر چین کے ساتھ امریکہ کو بھی شامل کر لیں تو دنیا بھر میں خارج ہونے والے نقصان دے گیسوں میں دونوں ممالک کا حصہ 40 فیصد بنتا ہے۔ توقع ہے کہ چین اور امریکہ چینی شہر ہانگژو میں اختتام ہفتہ پر منعقد ہونے والی جی 20 کانفرنس سے پہلے یا اس کے دوران پیرس کانفرنس معاہدے کی مشترکہ طور پر توثیق کا اعلان کریں گے۔ چین میں پیرس معاہدے کی منظوری کے بعد اسے کوئلے سے بجلی پیدا کرنے والے پلانٹس کو بند کرنا ہو گا جب کاربن کے اخراج کا سب سے بڑا ذریعہ ہیں۔

965 total views, 2 views today

Short URL: http://tinyurl.com/jhyk32d
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...