پنجاب کے مختلف اضلاع میں وارداتیں کرنے والے 11 کریمنل گینگز کے 76 خطرناک مجرمان کو گرفتار

Print Friendly, PDF & Email

پاکپتن(بیورورپورٹ) پنجاب کے مختلف اضلاع میں وارداتیں کرنے والے 11 کریمنل گینگز کے 76 خطرناک مجرمان کو گرفتار کرکے ان کی نشاندہی پر ڈیڑھ کروڑ سے زائد کا مسروقہ ناجائز اسلحہ برآمد کیا۔ علاقہ میں خوف کی علامت سمجھے جانے والے 448 اشتہاری مجرمان کو گرفتار کیا جن میں جن میں 136 A کیٹگری 352 B کیٹگری اور 215 عدالتی مفرور شامل ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ماریہ محمود نے نیو پولیس لائن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ایس پی انویسٹی گیشن سلیم وڑائچ،ایس ایچ او ملکہ ہانس عابد عاشق مہار ،ایس ایچ او جہانذیب وٹو ،ایس ایچ او رانا اجمل سعید ودیگر بھی موجود تھے اس موقع ڈی پی او پاکپتن نے اعلیٰ کارکردگی پر ایس ایچ او صدر رانا اجمل سعید ،ایس ایچ ملکہ ہانس عابد عاشق مہاروددیگر کو اعزازی سرٹیفکیٹ دئیے ڈی پی او ماریہ محمود نے کہاکہ ڈسٹرکٹ پولیس جرائم کے خاتمہ کیلئے کوشاں اور جرائم پیشہ عناصر کے سامنے آہنی دیوار بنی ہوئی ہے۔ آئی جی پنجاب پولیس امجد جاوید سلیمی کی خصوصی ہدایت پر جرائم پیشہ عناصر کیخلاف بلاامتیاز کریک ڈاؤن جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ پولیس نے رواں سال 2019 میں 1073 ملزمان گرفتار کرکے چالان عدالتوں میں بجھوائے۔ 488 اشتہاری مجرمان کو گرفتار کیا جن میں 136 A کیٹگری 352 B کیٹگری اور 215 عدالتی مفرور شامل ہیں۔ 241 منشیات فروشوں کو گرفتار کرکے کروڑوں روپے مالیت کی 57 کلو 311 گرام چرس، ایک کلو کے قریب افیون، 3345 لیٹر شراب برآمد کی اور 24 چالو بھٹیاں شراب پکڑی گئیں۔ 200 ملزمان کو گرفتار کرکے ناجائز اسلحہ 10 عدد رائفلیں، 30 بندوقیں، 15 ریوالور، 131 پسٹل، 2 کاربین، 974 کارتوس و گولیاں برآمد کیں۔ ناجائز اسلحہ بالخصوس کلاشنکوف کے حوالہ سے ضلع ہذا کی کارکردگی نمایاں رہی مختلف تھانہ جات میں 10 عدد کلاشنکوف برآمد کی گئیں۔

ڈی پی اور ماریہ محمود برآمد ہونے والا مسروقہ مدعی کے حوالے کر رہی ہے۔

11 کریمنل گینگز کو ٹریس کرکے ان کے 76 خطرناک ممبران کو گرفتار کیا اور ان کی نشاندہی پر ایک کروڑ 67 لاکھ 43 ہزار روپے سے زائد کا مسروقہ برآمد کیا۔ ضلع کچہری میں اندھا دھند قتل کا معاملہ پولیس کیلئے کھلا چیلنج تھا مگر پولیس نے انتہائی قلیل وقت میں ملزمان کو گرفتار کرکے پابند سلاسل کیا۔ ڈی پی او ماریہ محمود نے کہا کہ پولیس ملازمین کے بچوں کی تعلیم کیلئے پرائیویٹ سکولوں سے معاہدہ کرکے شہداء پولیس کے بچوں کیلئے 100فیصد جبکہ حاضر سروس پولیس ملازمین کے بچوں کیلئے 30 فیصد فیس کی رعائت کروائی گئی۔ اسی طرح نیو پولیس لائن ملازمان اور پبلک سکول کی بچیوں کیلئے پولیس ویلفیئر سلائی سکل سنٹر قائم کیا گیا جو یکم اپریل سے آپریشنل ہوگا۔ پولیس ملازمین فزیکل فٹنس کیلئے پولیس لائن میں جدید آلات سے آراستہ جم بنایا گیا ہے۔ شہداء کی یاد میں یادگار تعمیر کی گئی ہے۔ گورنر پنجاب کی طرف سے پولیس لائن RO پلانٹ بھی نصب کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سیزن میں پولیس لائن میں شجرکاری کے تحت کثیر تعداد میں سایہ دار اور پھل دار درختوں کی شجرکاری کی گئی ہے جو پولیس لائن کے حسن کو مزید اجاگر کررہی ہے۔ پولیس لائن کی صفائی ستھرائی صوبہ بھر میں نمایاں منظر پیش کررہی ہے۔

112 total views, 1 views today

Short URL: //tinyurl.com/yxpvu25k
QR Code:
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *