٭ ظہور احمد دھریجہ ٭

سرائیکستان نہیں صوبہ ملتان بنائیں ؟

تحریر: ظہور دھریجہ ۔11 فروری 2017ء کے خبریں میں ایک کالم ’’ لسانیت کے نام پر تقسیم قبول نہیں ‘‘ کے عنوان سے ارشد رحمان کے نام سے شائع کرایا گیا ، یہ در اصل وہی مضمون ہے جو رانا

ایک کالم، کالم نگاروں کی خدمت میں

تحریر: ظہوردھریجہ وزیر اعظم برسوں بعد ملتان تشریف لا رہے ہیں ۔ وسیب کے لوگوں کی تمنا ہے کہ وزیراعظم ان کے مسائل کی طرف توجہ کریں ۔ مگر ایک مسئلہ یہ بھی ہے کہ ان مسائل سے ان کو

سرائیکستان کے مخالفوں کے نام

تحریر: ظہور احمد دھریجہ خبریں 19 ستمبر 2016ء کی اشاعت میں تحریک صوبہ ملتان کے چیئرمین محترم رانا تصویر احمد کا مضمون ’’ سرائیکستان کے حامیوں کے نام ‘‘ شائع ہوا۔ انہوں نے لکھا کہ صوبے کے حوالے سے اسلم

کیا سرائیکی لیڈر صوبے کیلئے مخلص ہیں؟

تحریر: ظہور احمد دھریجہ روزنامہ خبریں 23 ستمبر 2016ء کی اشاعت میں سلیم صابر گورمانی نام کے کسی شخص کا مضمون ’’ کیا سرائیکی لیڈر صوبے کیلئے مخلص ہیں ؟ ‘‘ شائع ہوا ہے، لکھاری نے اپنے کالم کا جو

عدلیہ کی تاریخ کا غیر منصف مزاج جج افتخار محمد چوہدری

تحریر:ظہور احمد دھریجہ کہا جاتا ہے کہ انصاف کا سب سے زیادہ قتل عدالتوں میں ہوتا ہے۔ یہ کوئی نئی بات نہیں جو میں آپ سے شیئر کرنے جا رہا ہوں۔ پوری عدالتی تاریخ اس بات کی گواہ ہے ۔