٭ آر ایس مصطفیٰ ٭

دشمنان پاکستان کا ہدف افواج پاکستان

تحریر: آر ایس مصطفی جب کبھی پاکستان کی عوام پر یا پھر ملک پاکستان پر ’برا وقت آیا ساری قوم افواج پاکستان کی طرف ’امید بھری نظروں سے دیکھتی ہے کہ وہ آئے اور قوم کا اس مشکل گھڑی میں

مسلمانوں کا عظیم رہنما۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

گورنر جنرل ہاؤس کے لئے ساڑھے 38 روپے کا سامان خریدا گیا ،گورنر جنرل نے حساب منگوا یا معلوم ہوا کچھ چیزیں آپکی بہن نے اپنی ضرورت کی منگوائی تھیں اور کچھ آپ کی اپنی ذاتی استعمال کی چیزیں تھی۔

پاکستان میں احتجاجی تحریکوں کا موسم۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

پاکستان میں اس وقت احتجاج کی سیاست کا موسم عروج پر ہے۔ ماضی میں قوم نے ایسے کئی احتجاج دیکھے جن کے دوران ہونے والا تشدد افراتفری اور عدم استحکام تاریخ کے صفحات پر آج بھی موجود ہے مگر کیا

کشمیر کمیٹی!کشمیر میں بھارتی بربریت۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے کشمیر کا قیام 1993میں عمل میں آیا ،جس کا مقصد مسئلہ کشمیر کو دنیا کے سامنے اجاگر کرنااور حل کیلئے اپنی شفارشات پیش کرنا تھااس مقصد کن لئے اس کن پہلے چیئر مین نوابزادہ

کراچی پائیدار امن کی تلاش میں۔۔۔۔ تحریر:آ ر ایس مصطفی

دو صدی قبل بحیرہ عرب کے اس کنارے پر رہنے والے لوگوں کا ذریعہ معاش ماہی گیری تھا اور مچھیروں کی اس بستی کو یہاں کے لوگ ’’کلاچی جوگوٹھ‘‘ کہتے تھے،تجارت کی غرض سے آنیوالے عرب تاجر اس بستی کو

کرپشن پاکستانی سیاست کا ٹریڈ مارک۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

حضرت عمر فاروق ؓ کا مشہور قول ہے’’ عوام میں اس وقت تک خرابی پیدا نہیں ہوتی جب تک ان کے رہنماان سے سیدھے رہتے ہیں جب تک راعی اللہ کی راہ میں چلتا رہتا ہے رعایا اس کے پیچھے

ماں’’ محبتوں کا سر چشمہ‘‘۔۔۔۔ تحریر:آر ایس مصطفی

لفظ ماں محبتوں کا ایسا آنچل ایسا سمندر ہے جو زندگی کے تمام دکھوں تمام مصیبتوں کو اپنے اندر چھپا لیتا ہے ، رب کا ئنات کی بیشمار نعمتوں نوازشوں اور احسانات میں سے ایک نعمت اور نوازش والدین کا

جس سج دھج سے کوئی مقتل میں گیا وہ شان سلامت رہتی ہے۔۔۔۔ تحریر:آر ایس مصطفی

لاڑکانہ ڈسڑکٹ بورڈ کے چیئرمین جناب سرشاہنواز کے ہاں 5 جنوری 1928کو بیٹا پیداہوا،سرشاہنوازکے اس بیٹے کا نام ذولفقار علی بھٹو تھا جو کہ پاکستانی عوام کے محبوب رہنما کے طور پر ابھر کر سامنے آئے جن کو بعد میں

ٰٰٓٓٓتھر میں تھر تھراتی انسانیت۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

تھر میں زندگی کی رمق برقرار رکھنے کے لیے مستقل بنیادوں پر پینے کا صاف پانی مہیا کرنا سب سے اہم مسئلہ ہے۔تھر کی زمین اورتھری باشندوں کی پیاس بجھانے کے لئے آراوپلانٹ بھی کام نہ آیا۔پلانٹ کے تالاب پر

ہرفرد ہے ملت کے مقدر کا ستارہ۔۔۔۔ تحریر: آر ایس مصطفی

ایک دفعہ امیر المومینین حضرت عمر ین عبدالعزیز ریاست کے ا’مور نمٹانے کے اپنے گھر آئے اور آرام کرنے کے لئے لیٹے ہی تھے کہ بیوی نے غمگین لہجے میں کہا کہ امیر المومینین اگلے ہفتے عید آرہی ہے بچہ