٭ کالمز و آرٹیکلز ٭

پیشہ ور امتحانی فصلی بٹیرے

تحریر طاہر محمود آسی امتحان ایک ایسا لفظ ہے جسے سنتے ہی بڑوں بڑوں کے پاؤں تلے سے زمین نکل جاتی ہے۔ اور دل لرز جاتا ہے اور احساسات کانپ اْٹھتے ہیں ازل سے امتحانات کا سلسلہ شروع ہے۔ اللہ تعالیٰ

بنام منصف اعلیٰ

تحریر: محمد ناصر اقبال خان انسان فضاؤں اورخلاؤں میں، شاہراہوں پریاچاردیواری کے اندر جہاں بھی ہٹ دھرمی ،ڈھٹائی، بے اختیاطی اور مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کرے گاوہاں اس کے ساتھ حادثہ ہونااٹل ہے۔حادثات اور آفات کو انسان کی قسمت سے

اقلیتوں سے ناروا سلوک کا الزام ۔جھوٹ کا پلندہ

تحریر : محمد مظہررشید چودھری پیارے نبی حضرت محمد ﷺ کا فرمان ہے ’’خبردار! جس کسی نے کسی معاہد (اقلیتی فرد) پر ظلم کیا یا اس کا حق غصب کیا یا اس کو اس کی استطاعت سے زیادہ تکلیف دی یا

گرا دو یہ مکان! یہ جگہ سرکار کی ہے

تحریر :راؤ عمران سلیمان میرے والد محترم کا قدچھ فٹ سے بھی زیادہ تھا یہ کشادہ سینہ اور سرخ وسفید رنگ۔۔۔۔میں سوچ بھی نہیں سکتاتھا کہ یہ شخص بھی کبھی بیمارہوسکتاہے؟۔ اس روز میں نے محسوس کیا کہ والد صاحب پہلے

انجام

تحریر: محمد عنصر عثمانی4فٹ کا پہلوان اگر 6 فٹ کے پہلوان کو چت کردے تو جیتنے والے پہ نہیں ،ہارنے والے پہ ہجوم کف افسوس ملتا ہے۔اس پر طعن کیا جاتا ہے۔ہم جب بھی افغانستان میں امریکہ کی بوکھلاہٹ دیکھتے

شیخوپورہ تا گوجرانوالہ روڈ منصوبہ تاخیر کا شکار ۔ذمہ دار کون؟؟

تحریر: حامد قاضیکسی بھی ملک کی معاشی ترقی میں وہاں کے ذرائع آمدورفت کو اہم حیثیت حاصل ہوتی ہے اوریہ ذرائع آمدورفت پیداواری مراکز اور زرعی و صنعتی اشیاء کے حصول کے علاقوں کے درمیان مضبوط رابطے ملکی اقتصادی ترقی

کراچی بے پرواہ ہوگیا!

تحریر: شیخ خالد زاہدکراچی کبھی عروس ا لبلاد کہلاتا تھا ، روشنیوں کا شہر کہلاتا تھا ، بین الاقوامی شہر کہلاتا تھا، غریب پرور شہر کہلاتا تھااور ہماری کم علمی کہ معلوم نہیں اور کیا کچھ کہلاتا تھا، کراچی کی

انشااورمصحفی کاادبی معرکہ

تحریر: محمدپرویزبونیریاردوزبان میں ادبی معرکوں کابہت بڑاذخیرہ موجودہے۔اس امرمیں کوئی شک نہیں کہ ان معرکوں سے فریقین کے فن اورشخصیت کااسفل ترین حصہ معرض وجودمیں آیاہے ، مگریہ بھی ایک حقیقت ہے کہ یہ وہ ذخیرہ ہے جس کے وسیلے

ہم سارے ہی ’’کمین‘‘ ہیں اپنے خالق کے

تحریر: حنا شاہد ، بورے والاگھر میں آج کل کچھ تعمیراتی کام ہورہا ہے۔ پہلے تو ابا کی بیٹھک پکی کروائی ،اب صحن کا اکھڑا پلستر دوبارہ سے لگوایا جارہا ہے.جگہ جگہ اینٹیں،بجری،سیمنٹ اور ریت کے ڈھیر لگے ہوئے ہیں۔اماں

سادگی میں بھی حسن چمکتا ہے چاند کی طرح

تحریر: انعم ثناء، ہارون آبادفیشن آج کل کے انسان کے لئے لازمی جز بن گیا ہے۔گھر ہو یا کالج،آفس ہو یا یونیورسٹی،شادی ہو یا فوتگی،پارٹی ہو یا میلاد ہرجگہ فیشن کا خاص خیال رکھا جاتا ہے۔نوجوان نسل میں سجنے سنورنے