٭ کالمز و آرٹیکلز ٭

کرتار پور راہداری! پاکستان کی سرجیکل سٹرائیک

تحریر:محمد شاہد محمودکرتارپور راہداری کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ماضی صرف سیکھنے کیلئے ہے، رہنے کیلئے نہیں، آگے بڑھنے امن اور بھارت سے تعلقات پر پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں،

معذور افراد کے حقوق پر عمل درآمد کس حد تک

تحریر : محمد مظہررشید چودھری گزشتہ دنوں سپریم کورٹ آف پاکستان نے معذور افراد کے حقوق سے متعلق کیس کی سماعت کی تو مجھے 9اپریل 2015میں سابقہ حکومت کی جانب سے ضلعی سطح پر معذور افراد کے حقوق کے لیئے بنائی

عمران خان صاحب اسلامی جمہوریہ پاکستان کو انتشار سے بچائیں!

تحریر: میر افسر امانآسیہ ملعونہ کی قید سے رہائی کے سپریم کورٹ کے فیصلہ کے خلاف ملک میں دینی جماعتوں نے عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے بھر پور ملک گیر احتجاج کیا تھا ۔ حکومت نے دانشمندی سے دینی جماعتوں

شکریہ

تحریر: مالک خان سیال رات رات بھر دنیا کے سب سے بڑے انسان ، وجہِ تخلیق انسانیت، مومنین پر خالق کے احسانِ عظیم حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کھڑے عبادت میں گزار دیتے۔ ایک رات ام المومنین حضرت

بچپن اور پچپن

تحریر: محمد ناصر اقبال خانباب العلم حضرت علی رضی اللہ عنہ کا فرمان ہے،”میں نے اپنے ارادوں کے ٹوٹ جانے سے اللہ تعالیٰ کوپہچانا”۔آپؓ کے ایک دوسرے قول کامفہوم کچھ اس طرح ہے ،” زندہ انسان کوزندگی میں کئی بارمفاہمت

غزوات …جن سے مشرکین ومنافقین اوریہود ونصاریٰ کی کمر ٹوٹی

تحریر: مولانا محمد جہان یعقوب غزوہ تبوک سے واپسی پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے مسجد ضرار کو جلوانے کا حکم دیا ،یہ مسجد کے نام پر مسلمانوں کے خلافمنافقین کا ہیڈ کوارٹرتھا ،جو منافقوں نے مسلمانوں کے برخلاف

پیپلزپارٹی کا یوم تاسیں اور بلاول بھٹو کا مشن

تحریر: تیمور علی مہر ایوب خان کی آمریت کے خلاف زوالفقار علی بھٹو نے جس جمہوریت کا خواب دیکھا تھااسے آج بھی زوالفقار علی بھٹو کی شہادت کے بعد بھٹو خاندان نے پورا کرنے کے لیے اپنی کئی قیمتی جانوں کا

ممبئی حملے۔۔ چند حقائق

تحریر: آصف خورشید راناکوتلیہ چانکیہ ایک بد صورت، نفرت انگیز رنگت اور ٹیڑھی ٹانگیں رکھنے والا غریب شخص تھا جو آج سے تقریباً دو ہزار سال پہلے سرزمین ہند پر پیدا ہوا۔اس نے دوسروں کی آنکھوں میں اپنے لیے نفرت

عمران خان کمرہ امتحان میں بیٹھ چکے

تحریر: نصرت جبیں ملکسال ۱۹۹۲ سے بہت سی یادیں تازہ ہیں اس سال کوئی انفرادی کامیابی حاصل نہ ہوئی تھی بلکہ بطور قوم ہم اجتمائی طور پر کامیاب ہوئے تھے۔اسکی بنیاد بہت سی ناکامیوں کے بعد رکھی گئی تھی۔اس تمام

کھلونا

تحریر: پروفیسر محمد عبداللہ بھٹیاُ س کا اندرونی کرب اُس کی ویران آنکھوں میں ساون بھادوں کی طرح ٹھاٹھیں مار رہا تھا ‘امید کی ایک کرن کے لیے وہ دربدر ٹھوکریں کھاتی پھر رہی تھی ہر گزرتا لمحہ ہزاروں ٹن