٭ ایم سرور صدیقی ٭

نیا بجٹ مبارک

تحریر: ایم سرورصدیقی اہلیانِ وطن کو مبارک ہو۔۔۔نیا بجٹ آگیاہے عام آمی کو نہیں صدرِ پاکستان دلی مبارک بادپیش کرنے کو دل چاہتا ہے جن کو بغیر مانگے ماہانہ تنخواہ میں6لاکھ کا بیٹھے بٹھائے اضافہ کردیا گیا اسے کہتے ہیں

دال میں کالا

تحریر: ایم سرورصدیقی صدیوں پہلے عظیم فلاسفر افلاطون نے کہا تھا سیاست سے کنارہ کشی کا مطلب ہے تم پرکمترلوگ حکومت کریں اس کا کہا سچ ثابت ہوا آج اقتدار میں کمتر ہی نہیں کمینے لوگ بھی آگئے ہیں جنہوں

دولت سے محبت

تحریر: ایم سرورصدیقی بچپن میں ہم کرنسی نوٹوں پر اپنا نام لکھ کر سوچتے رہتے تھے کہ ایک دن یہ نوٹ گھومتا گھماتا ،پھرتا پھراتاپھر ہمارے پاس لوٹ آئے گا لیکن تادمِ تحریر ایسا نہیں ہوا ایک بھی کرنسی نوٹ

ہاتھی کے دانت

تحریر: ایم سرورصدیقیضروری نہیں کتابیں لکھ لکھ کر انبار لگادئیے جائیں یا اتنے منصوبے شروع کہ لوگوں کا جینا عذاب بن جائے تاریخ میں زندہ رہنے کیلئے ایک حوالہ ہی کافی ہوتاہے لیکن یہ بات آج تک کسی کی سمجھ

دال میں کالا

تحریر: ایم سرور صدیقی صدیوں پہلے عظیم فلاسفر افلاطون نے کہا تھا سیاست سے کنارہ کشی کا مطلب ہے تم پرکمترلوگ حکومت کریں اس کا کہا سچ ثابت ہوا آج اقتدار میں کمتر ہی نہیں کمینے لوگ بھی آگئے ہیں جنہوں

زندگی کا ذائقہ

تحریر: ایم سرور صدیقی کہتے ہیں جب دنیا میں کچھ نہ تھا پانی تھا اور جب کچھ نہیں ہوگا تب بھی پانی ہی ہوگا پانی زندگی کی علامت ہے اورقدرت کا بیش قیمت تحفہ بھی جس کا کوئی نعم البدل

نیاسال! نئی توقعات

تحریر: ایم سرورصدیقی لو ایک اور سال تمام ہوا۔۔عہدِ رفتہ کا ایک اور باب رقم۔معلوم نہیں ہماری عمرکا ایک سال اور کم ہوگیا یا زیادہ بہرحال2016ء اپنے دامن میں انتہائی تلخ یادیں لئے رخصت ہوا۔۔ جو شاید ہم بھلائے بھی

کیا تصویرغیر اسلامی ہے؟

تحریر: ایم سرورصدیقی، لاہور مرزاغالب نے کہا تھا بعدمرنے کے میرے گھرسے یہ ساماں نکلا چند تصویریںِ بتاں۔۔چند حسینوں کے خطوط اب یہ تو علم نہیں کہ یہ خطوط کہاں سے آئے اور تصویریں کس کی تھیں؟لیکن ہمیں اتنا معلوم

د نیا کے منصفو

تحریر: ایم سرورصدیقی، لاہور یہ یکم جنوری 1990 ء کی بات ہے جب جماعت اسلامی کے امیر قاضی حسین احمد نے ایک تقریب کے دوران بھارتی ظلم و ستم کے خلاف کشمیری مسلمانوں کے ساتھ5فروری کو عالمی سطح پر یومِ

دسمبرہرسال کیوںآجاتاہے

تحریر: ایم سرورصدیقی، لاہور سوچتاہوں دسمبرکا مہینہ ہرسال کیوں آجاتاہے؟۔۔ہرسال دل کے زخم ہرے ہو جاتے ہیں اور اداسی رگ و پے میں گویاپھیل سی ہو جاتی ہے دسمبر کا مہینہ کیلنڈرسے نکال بھی دیا جائے تو حقائق تو نہیں