٭ عرفان مصطفی صحرائی ٭

امریکہ کوئی غلطی نہ کر بیٹھے

تحریر: عرفان مصطفیٰ صحرائی امریکہ اور ایران کے مابین کشیدہ صورتحال نے دنیاعالم کو تشویش میں مبتلا کر رکھا ہے ۔ڈونالڈ ٹرمپ ایک جانب ایران کے ساتھ جنگ کے حق میں نہیں ۔لیکن دوسری جانب امریکی بحری بیڑے کی بحیرہ¿

بچیاں سب کی سانجھی ہوتی ہیں

تحریر: عرفان مصطفیٰ صحرائی وفاقی دارالحکومت کے نواحی علاقے علی پور سے اغوا ہونے والی 10سالہ ”فرشتہ“ کی تشدد زدہ نعش نواحی علاقے جگیوٹ کے جنگل سے برآمد ہو ئی ہے ۔چار روز جنگل میں پڑی رہنے سے نعش کو

حکمران ،کرپٹ مافیا اور غریب عوام

تحریر: عرفان مصطفی صحرائی ہمارے معاشرے میں کرپشن جراثیم کی طرح پھیل چکی ہے ۔کرپشن کے جراثیم کو مارنے کے لئے مخصوص دوا نہیں ہوتی بلکہ اس مرض کی تشخیص اور علاج مختلف اندازمیں کرنا پڑتا ہے۔اس کا علاج کوئی

یہ آگ ٹھنڈی کیسے ہوگی

تحریر: عرفان مصطفیٰ صحرائی نجانے کیوں مجھے ان دانشوروں کی دانشوری پر رونا آتا ہے ۔جو شاہ سے زیادہ شاہ کے وفاداری میں اپنی ساری بنی بنائی عزت برباد کرنے پر تلے ہیں ۔جب ان کی جانب سے یہ کہا

یہ”انقلاب“ ہے یا ”عذاب“۔

تحریر: عرفان مصطفیٰ صحرائی کسی ملک کے مستقبل کے لئے اعلیٰ معیار تعلیم ،صلاحیت سازی اور ہنر مندی اہم ہوتے ہیں ۔تعلیم انسان کا حق ہے ،جسے کوئی اس سے نہیں چھین سکتا۔یہی تعلیم قوموں کی ترقی اور زوال کی

مظفر گڑھ کے حق گو سیاستدان کی ایوان میں صدا

تحریر: عرفان مصطفٰی صحرائی ایک زمانہ تھا جب ہمارے ہاں کردار کو اہمیت حاصل تھی ۔رہنما انسانی خدمت کی باتیں کرتے اور حسن واخلاق کا پرچار کرتے دکھائی دیتے تھے۔لیکن وقت نے پلٹا کھایا،کردار کی جگہ دولت نے لے لی

نیا بلدیاتی نظام حکمران کی خواہش کی بھینٹ

تحریر: عرفان مصطفی صحرائی عوام عرصے سے اچھی خبر کے لئے ترس گئے ہے ۔ریاست کے تمام ستون دانستہ شکستہ اور کمزور کر دیئے گئے ہیں ۔ذاتی اَنا اور مفادات کی اسیر قیادت کو زبردستی عوام پر مسلط کر دیا

۔”اَنا“ کی بھینٹ چڑھتا پنجاب

تحریر: عرفان مصطفی صحرائی پاکستانی قوم پریشان ہے۔حکومتی تمام پالیسیاں ناکام ہو چکی ہیں ۔سیاسی میدان جگت بازی اور لطیفہ بن کر رہ گیا ہے ۔تبدیلی کا نعرہ دم توڑ چکا ہے،اب تو شاید تبدیلی لانے والوں کی تبدیلی پر

خطرناک ”گیم پلان“ کی ابتدا ہو چکی

تحریر: عرفان مصطفی صحرائی آج ہم جس معاشرے میں سانس لے رہے ہیں،وہ ایک گھٹن زدہ معاشرہ بن چکا ہے ۔حکمران ہوس اقتدار میں اتنے آگے بڑھ چکے ہیںکہ انہیں اچھے برے کی تمیز نہیں رہی ۔حکمرانوں کو یہ تک

عالمی سازشوں میں گھرا پاکستان

تحریر: عرفان مصطفی صحرائی حکمرانوں کو عوام سے غلط بیانی کرنے سے کیوں سکون ملتا ہے..؟ملک اس نہج پر کیوں پہنچ چکا ہے کہ غریب خودکشیاں کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں …پاکستان وسائل ہونے کے باوجود اتنا مجبور کیوں ہے