٭ حفیظ خٹک ٭

قوم کی بیٹی ، مریم کی عید الضحی

تحریر: حفیظ خٹک وہ میرے پاس آئی اور کہا کہ میں نے اپنی جیب خرچی میں بچائے اور پیسوں کو بچانے کا مقصد یہ ہے کہ قربانی والی عید آنے والی ہے اور اس عید پر سب جانوروں کی قربانی

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی،میرے ساتھ چل

تحریر: حفیظ خٹک میرے شوہر دفتر جانے کیلئے روزانہ کی تیار ہوئے اور خداخافط کہتے ہوئے گھر سے نکلے۔انہیں الوداع کرنے کے بعد گھر کے کاموں میں مصروف ہوگئی۔ شام ہوگئی اور وہ ابھی تک گھر نہیں آئے تھے،وقت گذرنے

رئیل اسٹیٹ !راست اقدام اپنائیں

تحریر: حفیظ خٹک وطن عزیز کا معاشی حب کہلانے والا شہر قائد دو کڑور سے زائد آبادی پر مشتمل ہے ۔ گذرتے وقت کے ساتھ جہاں مسائل میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے وہیں پر وسائل بھی بڑھتے جا رہے

بیٹا نواز شریف ، وعدہ پورا کرو،عصمت صدیقی

تحریر: حفیظ خٹک انتخابات میں وہ عوام کے سامنے کہا کرتا تھا کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو میں واپس لے کر آؤنگا ۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی جو قوم کی بیٹی ہے اور جسے امریکہ نے برسوں سے قید کیا ہوا

عمران خان کا تیسرا کینسر ہسپتال

تحریر: حفیظ خٹک شہر قائد میں پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کینسرہسپتال بنانے کا آغاز کردیا ۔ کینسر کے خلاف ان کی عملی جنگ بھرپور عوامی حمایت کے ساتھ اللہ کے خصوصی فضل و کرم سے

قائد کا سلطان !سلطان زبیری

تحریر: حفیظ خٹک گلشن اقبال بلاک 5میں ان کے گھر اپنے اک دوست کے ہمراہ پہنچا اور گلی کے کونے پر موٹر سائکل کھڑی کر کے پیدل ان کے دروازے پر پہنچے اور ان کے گھر پر گھنٹی بجائی ۔

پی آئی اے کاشہید کوپائلٹ

تحریر: حفیظ خٹک ۔8دسمبر کی سہ پہر تھی جب اک خبر بریکنگ نیوز کی صورت میں ٹی وی چینل پر ابھری اور اس کی تفصیل کے بعد پوری قوم درد کی اک مستقل کیفیت سے تاحال گذر رہی ہے۔ چترال

سندھ اسمبلی کے نئے بل پر عوام کے اثرات

تحریر: حفیظ خٹک وطن عزیز میں قانون سازی کیلئے صوبائی اور قومی اسمبلی اپنی ذمہ داریاں نبھا نے کیلئے کوشاں ہیں۔ عوام کے مسائل کو حل کرنے اور انہیں زیادہ سہولیات پہنچانا اراکین کی بنیادی ذمہ داری ہے ۔ ان

ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو رہا کرو

تحریر: حفیظ خٹک شہر قائد کے پریس کلب پر گذشتہ 85دنوں سے سہ پہر کے اوقات میں چند مائیں ، بہنیں ، بیٹیاں ، بچے آتے ہیں ، خاموش احتجاج کا آغاز کرتے ہیں ، ہینڈبلز ، پوسٹرزرکھتے اور بانٹتے

صبح کی چہل قدمی ضروری ہے

تحریر: حفیظ خٹک شہر قائد میں بلدیاتی انتخابات کے بعد نئے ناظم وسیم اختر منتخب ہوئے اور انہوں نے متعدد مقدمات کے باعث اپنی نظامت کی ذمہ داریوں کا آغاز جیل سے کیا ۔ باہر آجانے کے بعد ان کی