٭ چوہدری غلام غوث ٭

غم کی بولتی تصویر

تحریر:چوہدری غلام غوث میں چونکہ صحافت کا باقاعدہ طالب علم رہا ہوں تو زمانہ طالب علمی میں نصاب کی ایک کتاب میں تصویر کے بارے میں چینی کہاوت پڑھی تھی جو کہ صحافت کے تمام طالب علموں کی طرح میرے

ماہ نور بنام کینسر زدہ نظام

تحریر:چوہدری غلام غوث دنیا میں زندگی گزارنے کے لئے تین اشیاء انتہائی ضروری ہوتی ہیں ۔ مناسب آمدنی ، عزت اور سماجی رتبہ مگر بدقسمتی سے ہمارے ادنیٰ سرکاری ملازمین کے پاس یہ تینوں چیزیں ناپید ہیں ۔ محمود بٹ

قوتِ برداشت کی کمی

تحریر: چوہدری غلام غوث بابا جی پڑھے لکھے دانشور اور تاریخ پر گہری نظر رکھنے والے جہاندیدہ شخص تھے بابا جی نے اپنے نوجوان پوتے کو بلایا پیار سے اپنے پاس بٹھا لیا اور کہنے لگے تجھے پتہ ہے کہ

دیار مدینہ سے محبت

تحریر: چوہدری غلام غوث عجیب اتفاق ہے کہ سرور کائنات حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ وآلہ وسلم کی بعثت سے قبل مدینہ یثرب کہلاتا تھا ۔جس کا مطلب تھا مصیبتوں والی بستی مگر سرور کائنات کی پرنور آمد سے مدینہ

انصاف ہو تو ایسا

تحریر: چوہدری غلام غوث اپنی حدود و قیود اور اپنے مدار میں رہنا انصاف ہے جبکہ اپنی حدود سے تجاوز کرنا اور اپنے مدار سے نکل جانا بے انصافی ہے اس کی بہترین مثالیں قدرت کے فطری نظام میں موجود

آج کا سوال اور ڈیڈ اینڈ

تحریر: چوہدری غلام غوث پاکستان کی سیاست کا یہ المیہ ہے کہ ہر دس پندرہ روز بعد ایک نیا سوال جنم لے لیتا ہے اور یہ سوال اس وقت تک پوچھا اور دہرایا جاتا رہتا ہے جب تک کوئی نیا

صرف انصاف کی جیت چاہیے

تحریر : چوہدری غلام غوث حضرت عمر فاروقؓ اپنے دور حکومت میں ایک قاضی کی عدالت میں پیش ہوئے ۔آپ کو دیکھ کر قاضی احترام میں کھڑا ہو گیا ۔قاضی کے اس عمل سے آپ کا رنگ غصے سے سرخ

۔2نومبر -پانامہ لیکس -جمہوریت

تحریر: چوہدری غلام غوث بابا جی مہر دین ہمارے گاؤں کے حجام تھے اور ہما رے آباؤ اجداد کے ساتھ ہندوستان سے ہجرت کرکے آئے تھے باباجی اَن پڑھ ،سادہ مگر دانشور قسم کی آدمی تھے ہمارے گاؤں کے اکثر

ووٹ بنک کی تقسیم

تحریر: چوہدری غلام غوث جمہوری نظام کی یہ بہترین خوبی ہے کہ حق رائے دہی کا حق یعنی ووٹ کی قدر و قیمت ایک جیسی ہوتی ہے نواز شریف ،زرداری ،عمران کے ووٹ اور ایک عام مزدور یڑھی بان اوردہقان

ماجھے کی فہم و فراست

تحریر:چوہدری غلام غوث معراج دین عرف ماجھا ایک کار پینٹر ہے اور حکومت کی مقرر کی گئی کم ازکم تنخواہ 14000ہزار روپے ماہانہ وصول کرتا ہے کل میرے پاس آیا وہ بہت زیادہ خوش تھا خوشی اس کے چہرے سے