سنٹرل جیل ڈیرہ غازی خان میں مذہبی انتہا و شدت پسندی عروج پر

Print Friendly, PDF & Email

مکرمی و محترمی! سنٹرل جیل ڈیرہ غازی خان میں ان دنوں مذہبی انتہا و شدت پسندی عروج پر ہے ۔ مذہبی اور فرقہ وارانہ سوالات میں الجھا کر حوالاتیوں اور نئے حوالاتیوں کو ذلت آمیز ، شدید تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے ۔ حتیٰ کہ سر کے بال اور مونچھیں کاٹ کر بھی رسوا ء کیا جاتا ہے ۔ مزید بر آں جس میں بھاری کرپشن نہ دینے والے حوالاتیوں پر بھی بے جا تشدد کیا جاتا ہے ۔ مذکورہ بالا شواہد اور زمینی حقائق سے یہ تجزیہ با آسانی اخذ کیا جاسکتا ہے ۔ کہ مذاہب اور فرقوں کی بحث میں الجھا کر انسانی حقوق کی خلاف ورزی طالبانائزیشن کے فروغ کا دوسرا نا م ہے ۔ اس حوالے سے میری یہ دلیل یقیناًارباب حل و عقد کو ناگوار گزرے گی ۔ لیکن اس سنگین مسئلے کو موضوع بحث بنانا بھی بحیثیت ذمہ دارپاکستانی اور قلمکار اولین ترجیح ہے تاکہ فرقہ وارانا اور مذہبی انتہاء پسندی کا وجود باقی نہ رہے ۔ ستم در ستم یہ کہ حولاتیوں پر یہ تشدد جیل میں قید خطر ناک ترین مجرموں کے ذریعے کرایا جاتا ہے ۔ اس میں جیل سپرنٹنڈ نٹ کے علاوہ دیگر عملہ جیل کا برابر کا ہاتھ ہے ۔ اگر مذکورہ سلگتے مسئلے پر سپریم کورٹ آف پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب نے نوٹس لے کر کاروائی کا آغاز کر دیا تو یقیناًسوچ میں ترقی آسکتی ہے ۔۔۔۔۔!

از قلم: منشاء فریدی، ڈیرہ غازی خان

3,955 total views, 3 views today

Short URL: http://tinyurl.com/hkjn6r5
انٹرنیٹ پہ سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضامین
loading...